میرپور، لطیف آفریدی ایڈووکیٹ کے قتل کیخلاف وکلاء کی ہڑتال

لطیف آفریدی قتل: پاکستان اور سپریم کورٹ بار کا ملک گیر عدالتی بائیکاٹ کا  اعلان

میرپور:سابق صدر سپریم کورٹ بار لطیف آفریدی ایڈووکیٹ کو پشاور ہائی کورٹ بار روم کے اندر فائرنگ کر کے قتل کیا گیا جس کی وجہ سے میرپور کے وکلاء نے گذشتہ روز سوگ منایا اور وکلاء عدالتوں میں بھی پیش نہیں ہوئے۔سپریم کورٹ بارنے بار کونسل کے ساتھ اس واقع کی شدید مذمت اوراظہار یکجہتی بھی کیا۔

آزاد کشمیرسپریم کورٹ بار کے صدرمحمد زبیر راجہ ایڈووکیٹ نے کہا کہ سابق صدر سپریم کورٹ بار لطیف آفریدی ایڈووکیٹ سینئر وکیل تھے۔قاتلوں نے مظلوم لوگوں کی ایک تندرست اور موثر آواز کو ہمیشہ ہمیشہ کے لیے خاموش کر دیا ہے۔

حکومت وکلاء کو تحفظ دینے میں مکمل ناکام ہوچکی ہے۔ٹارگٹ کر کے وکلاء کو قتل کرنا انتہائی شرمناک واقع ہے ہم اس کی پرزور مذمت کرتے ہیں۔لطیف آفریدی ایڈووکیٹ سینئر وکیل تھے ان کی جمہوریت کی بحالی کے حوالے سے لازوال قربانیاں ہیں۔ متعدد مرتبہ انہوں نے مارشل لاء کے دور میں جیلیں بھی کاٹیں۔ انہوں نے کہا قتل کی وجہ سے وکلاء میں شدید اضطراب پایا جا رہا ہے۔

جان و مال کا تحفظ فراہم کرنا ریاست کی ذمہ داری ہے۔راولپنڈی میں شیخ عمران ایڈووکیٹ اور پشاور ہائی کورٹ بار روم کے اندر لطیف آفریدی ایڈووکیٹ کوفائرنگ کر کے قتل کیا گیا جو لمحہ فکریہ اور سیکورٹی کے حوالے سے ایک سوالیہ نشان ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *